Official Web

چین میں موجود دنیا کی سب سے بڑی ٹیلی سکوپ نے کام کا باقاعدہ آغاز کر دیا

بیجنگ:  دوربین کو تین سال کے آزمائشی آپریشن کے بعد منظور کیا گیا ہے۔ پانچ سو میٹر رقبے پر پہلی ٹیلی سکوپ کو بنانے میں پاکستانی سائنسدانوں نے بھی کردار ادا کیا۔

تفصیلات کے مطابق چین میں بنائی گئی اس ریڈیو ٹیلی سکوپ کی ڈش کا رقبہ آدھے کلومیٹر تک پھیلا ہوا ہے۔ اس ٹیلی سکوپ نے گزشتہ دو سال میں ایک سو دو نئے اجرام فلکی دریافت کئے۔
ایک اندازے کے مطابق چینی ٹیلی سکوپ نے یورپ اور امریکا کے سائنسدانوں کی نسبت زیادہ اجرام فلکی دریافت کئے۔ یہ ایک سیکنڈ میں اڑتیس جی بی ڈیٹا جمع کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

اس ریڈیو ٹیلی سکوپ کو ستر کروڑ امریکی ڈالرز کی لاگت سے بیس سال کے عرصے میں بنایا گیا ہے۔ ریڈیو ٹیلی سکوپ بنانے میں امریکا، برطانیہ اور پاکستان کے 10 سائنسدانوں نے اہم کردار ادا کیا۔ چائنیز اکیڈمی آف سائنسز نے ٹیلی سکوپ کو آزمائش کے بعد منظوری دی۔

Comments
Loading...