Official Web

مظلوم کشمیریوں کی زبان بندی ختم کی جائے، ایمنسٹی انٹرنیشنل کا مطالبہ

سرینگر: ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مودی سرکار کے مقبوضہ کشمیر میں سب اچھا کے دعویٰ کا پردہ چاک کردیا۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ ایک ماہ سے زائد عرصہ سے کرفیو کے نفاذ سے 80 لاکھ کشمیریوں کی زندگی پٹڑی سے اتر چکی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایمنسٹی انٹرنیشنل کی انسانیت کو اولیت دو، کشمیر کا لاک ڈاؤن ختم کرو مہم جاری ہے۔ بیان الاقوامی تنظیم نے کرفیو، تشدد اور گرفتاریوں کو کشمیری عوام کو اجتماعی سزا دینے کے مترادف قرار دیتے ہوئے زبان بندی ختم کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا تھا کہ ایک ماہ سے زائد عرصہ سے کرفیو اور لاک ڈاؤن کے بعد مقبوضہ کشمیر میں صورتحال نارمل نہیں ہے، 80 لاکھ کشمیریوں کی زندگیاں پٹڑی سے اتر چکی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کشمیر نوجوان، بچے اور بوڑھے سب گھروں میں قید اور خاندانوں سے کٹ گئے ہیں۔ اس بلیک آؤٹ کی انسانیت کو قیمت بھگتنا پڑ رہی ہے، جو نظر انداز نہیں کی جا سکتی۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا ہے کہ بیماروں اور مصائب میں گھرے کشمیریوں کی مدد کے لئے ڈاکٹروں اور سماجی ورکروں کا کام بہت زیادہ متاثر ہوا ہے۔ انسانیت کو اولیت دیتے ہوئے کشمیریوں کی زبان بندی ختم کی جائے۔

Comments
Loading...