Official Web

رواں مالی سال روئی کی برآمدات میں ریکارڈ اضافہ متوقع

کراچی:  کاٹن جنرز فورم کے مطابق رواں برس بنگلا دیش، ویت نام اور انڈونیشیا کے علاوہ دیگر ممالک میں بھی روئی برآمد کیے جانے کا امکان ہے۔

پاکستان سے بڑے پیمانے پر روئی کی برآمدات شروع ہو گئی۔ چیئرمین کاٹن جنرز فورم احسان الحق کے مطابق اس وقت پاکستان سے بنگلا دیش، ویت نام اور انڈونیشیا کو روئی کی برآمدات کی جا رہی ہیں۔

توقع ہے کہ آئندہ کچھ عرصے کے دوران دیگر ممالک کو بھی روئی کی برآمدات شروع ہونے کے روشن امکانات ہیں۔ احسان الحق نے بتایا کہ روپے کی قدر میں کمی کے باعث روئی کی برآمدات میں اضافے کا امکان ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستان میں کپاس کی نئی فصل کی آمد شروع ہوتے ہی بھارت کو بڑے پیمانے پر روئی کی برآمدات کی جاتی تھیں لیکن رواں سال بھارت نے پاکستان سے روئی کی درآمدات پر ریکارڈ 200 فیصد کسٹم ڈیوٹی عائد کر رکھی ہے جس کے باعث رواں سال پاکستان سے بھارت کو روئی کی برآمدات ابھی تک شروع نہیں ہو سکیں۔

Comments
Loading...