Official Web

آئی ایم ایف کی پاکستان کو قرض پروگرام کے ساتھ عائد شرائط کی تفصیلات جاری

واشنگٹن: عالمی مالیاتی فنڈ ( آئی ایم ایف) نے پاکستان کے لیے اعلان کردہ 6 ارب ڈالر کے  قرض پروگرام کے ساتھ عائد شرائط کی تفصیلات جاری کردیں۔

آئی ایم ایف کے مطابق پاکستان سالانہ 1500 سے 2000 ارب روپے ٹیکسوں کی مد میں آمدن بڑھائے گا، پاکستان میں کرنسی کی شرح تبادلہ مارکیٹ طے کرے گی اور اسٹیٹ بینک کرنسی کی شرح تبادلہ میں مداخلت نہیں کرے گا۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ مانیٹری پالیسی کے ذریعے مہنگائی کو قابو کیا جائے گا۔

توانائی کے شعبے سے متعلق آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ پاکستان میں توانائی کے شعبے میں اصلاحات کی جائیں گی اور گردشی قرضوں کا خاتمہ کیا جائے گا، واجبات کی وصولیاں یقینی بنائی جائیں گی جب کہ گیس اور بجلی کی قیمتوں میں سیاسی مداخلت نہیں کی جائے گی۔

Gerry Rice

@IMFSpokesperson

IMF Executive Board approved today a three-year US$6 billion loan to support ’s economic plan, which aims to return sustainable growth to the country’s economy and improve the standards of living.

537 people are talking about this

آئی ایم ایف نے کہا ہے کہ کرپشن کے خاتمے کے لیے کاررروائیاں کی جائیں اور اداروں کو مضبوط کر کے ان میں شفافیت لائی جائے، منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کو روکا جائے۔

آئی ایم ایف کا اپنے بیان میں کہنا ہے کہ پاکستان کی معیشت کو شدید چیلنجز درپیش ہیں، ناقص پالیسیوں کی وجہ سے معیشت کمزور ہوئی، اندرونی اور بیرونی قرضوں میں اضافہ ہوا۔

آئی ایم ایف کے مطابق ماضی میں ڈالر کی قیمت کو مصنوعی طور پر کنٹرول کیا گیا، پاکستان میں ٹیکس کے نظام میں کمزوریاں ہیں جب کہ سرکاری اداروں میں نا اہلی کے باعث نقصانات میں اضافہ ہوچکا ہے۔

Comments
Loading...