Official Web

کرتارپورراہداری پراجلاس میں جانا مثبت ہمسائیگی کی طرف قدم ہے، پاکستان

اہور: پاکستان اور بھارت کے درمیان کرتارپور راہداری منصوبے پر مذاکرات آج ہوں گے۔

گزشتہ روز کرتار پور راہداری مذاکرات کے لیے  پاکستان کے نائب ہائی کمشنر سید حیدر شاہ بھارتی شہر امرتسر پہنچے تھے اور آج 18 رکنی پاکستانی وفد پہنچ رہا ہے۔

پاکستانی وفد کی قیادت وزارت خارجہ میں ڈی جی ساؤتھ ایشیا ڈاکٹر محمد فیصل کریں گے۔

ملاقات میں کرتارپور راہداری سے پاکستان جانے کے لیے ویزہ استثنیٰ کے معاملے پر بھی بات ہوگی۔

کرتاپور راہداری منصوبہ اس سال اکتوبر میں مکمل ہونے کا امکان ہے، راہداری منصوبے میں دریائے راوی پر پل اور ساڑھے چار کلو میٹر سڑک شامل ہے۔

ذرائع کے مطابق دریا پر پُل اور سڑک کی تعمیر کا کام 50 فیصد مکمل ہوچکا ہے اور منصوبہ نومبر میں ہونے والے بابا گورو نانک کی 551ویں برسی سے قبل مکمل ہونے کا امکان ہے۔

ادھر بھارت نے ایک مرتبہ پھر ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کرتار پور راہداری منصوبے پر مذاکرات کی کوریج کے لیے پاکستانی صحافیوں کو ویزے جاری نہیں کیے ہیں۔

 ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا ایک ٹوئٹر بیان میں کہنا تھا کہ 30 سے زائد بھارتی صحافیوں نے کرتار پور راہداری کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی اور انہوں نے وزیراعظم عمران خان سے بھی ملاقات کی تھی جب کہ بھارتی صحافیوں کے لیے وزیر خارجہ نے عشائیہ کا اہتمام بھی کیا تھا تاہم بھارت نے پاکستانی صحافیوں کو ویزے نہیں دیے جس پر افسوس ہے۔

Comments
Loading...